اسلام آباد : چیف جسٹس نے ریمارکس جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈیم کب شروع ہونا ہے ہم نے کہا تھا کہ چارٹ بنا کر دیں ، ہم نے اورنج لائن کا پورا شیڈول طے کر دیا ہے۔سپریم کورٹ میں دیامر اور مہمند ڈیم کی تعمیر پرعملدرآمد کیس کی سماعت ہوئی جس دوران چیئرمین واپڈا نے بیان دیتے ہوئے کہا کہ ڈیسکون شنگھائی بینک سے 72 ارب روپے قرض لے رہی ہے ۔ گورنر سٹیٹ بینک نے بتایا کہ ہمیں 50 ممالک سے پیسہ آیا ہے اور 9.1 ارب روپے جمع ہو چکے ہیں ۔چیف جسٹس نے ریمارکس جاری کرتے ہوئے کہا کہ ڈیم کب شروع ہونا ہے ہم نے کہا تھا کہ چارٹ بنا کر دیں ، ہم نے اورنج لائن کا پورا شیڈول طے کر دیا ہے ۔ چیئر مین واپڈا کا کہناتھا کہ مہمند ڈیم پر کام شروع ہو چکے ہیں ، جیوٹیک بورنگ شروع کی اور موسمیاتی سٹیشن لگایا ہے ۔جسٹس اظہار الحسن نے کہا کہ ککام تب شروع ہو گا جب کنٹریکٹر وہاں پہنچ جائے گا ۔ چیئر مین واپڈا نے کہا کہ جون 2024 تک مہمند ڈیم کا کام مکمل ہو جائے گا ، 117 ارب روپے وفاقی حکومت دے گی ، 29 ارب روپے واپڈا خود حصہ ڈالے گا،اور 46ارب روپے مقامی بینکوں سے قرضہ لیا جائے گا ۔