انقرہ : ترک نشریاتی اتھارٹی نے گیتوں کے یورپی مقابلے یورو وژن کو بچوں کے لیے نامناسب پروگرام قرار دیا ہے۔ اس بنیاد پر ترکی نے اس مقابلے کا بائیکاٹ کر رکھا ہے۔جرمن نیوز ایجنسی کے مطابق ترکی کے جدید موسیقی کے گلوکار بظاہر اپنے ملک میں خاصی شہرت رکھنے کے علاوہ بہت زیادہ پسند بھی کیے جاتے ہیں۔ مبصرین کے مطابق اس صورت حال کے باوجود ترک حکام سن 2012 سے گیتوں کے یورپی مقابلے یورو وژن کا ایک انداز میں بائیکاٹ کی پالیسی اپنائی ہوئی ہے۔ترک نشریاتی اتھارٹی کا موقف یہ ہے کہ سرکاری ٹیلی وڑن پر نو بجے کے بعد بھی اس پروگرام کو نشر کرنا محال ہے کیونکہ اس وقت بھی بہت سارے بچے ٹیلی وژن دیکھ رہے ہوتے ہیں۔ اس منابست سے سن 2014 میں ایک داڑھی والے آسٹرین مرد کی مثال بھی دی جاتی ہے۔ ا±س شخص نے مقابلے میں شریک ہو کر خود کو ایک ہی وقت میں مرد اور عورت قرار دیا تھا۔ اس داڑھی کے حامل مرد نے خود کو ڈریگ کوئین کونچیٹا کا نام دے رکھا تھا۔ترک براڈ کاسٹنگ اتھارٹی کے سربراہ ابراہیم ایرن کا کہنا ہے کہ کئی ممالک ترکی کے موقف کی حمایت کرتے ہیں اور اس کو درست بھی قرار دیتے ہیں۔ ایرن کے مطابق اگر یورو وڑن کے منتظمین اس مقابلہ موسیقی کے انداز اور مواد میں تبدیلی پیدا کرتے ہیں تو ترکی کو اسے نشر کرنے میں کوئی عار نہیں ہو گا۔