لاہور: سابق صدر ممنون حسین عیدالاضحیٰ اور 14 اگست کو پنجاب کی جیلوں میں قیدیوں کو 6 ماہ کی معافی دینا بھول گئے۔ جیلوں میں بند ایک ہزار کے قریب قیدی سابق صدرممنون حسین کی معافی کا انتظار کرتے رہ گئے۔ جبکہ گزشتہ سال سابق صدر کی طرف سے عید ین اوریوم آزادی پر دی جانے والی معافی سے 390 قیدیوں کو رہائی ملی تھی اور 498 قیدیوں کی سزائوں میں کمی ہوئی تھی۔ کے مطابق سابق صدر ممنون حسین رواں برس پنجاب کے قیدیوں کو معافی دینا بھی بھول گئے۔ صدر کی طرف سے عیدالاضحیٰ اور 14 اگست یوم آزادی کے موقع پر جیلوں میں قیدیوں کو تین تین ماہ کی معافی دی جاتی ہے۔ سابق صدر نے ان دونوں مواقع پر پنجاب کی جیلوں میں قیدیوں کو معافی نہیں دی۔ جیل ذرائع کے مطابق سابق صدر کی طرف سے معافی نہ دینے کی وجہ سے قیدیوں میں کافی مایوسی پائی جا رہی ہے۔ اور اب قید یوں نے نئے صدر عارف علوی سے امیدیں لگا لی ہیں۔ سابق صدر کی طرف سے 2017 میں عید پر دی جانے والی معافی سے جیلوں میں بند 91 قیدیوں کی رہائی ہوئی تھی اور 418 قیدیوں کی سزائوں میں کمی ہوئی تھی۔ جبکہ 2017 میں 14 اگست کو دی جانے والی معافی پر 299 قیدیوں کو رہائی ملی تھی اور 80 قیدیوں کو فائدہ ہوا تھا۔ واضح رہے کہ صدر کی طرف سے دی جانے والی معافی کا اطلاق صرف معمولی جرائم میں ملوث قید یوں پر ہوتا ہے۔ دہشت گردی،قتل، اغوا برائے تاوان و دیگر سنگین مجرموں پر معافی کا اطلاق نہیں ہوتا۔