نئی دہلی : بھارت کے شہربریلی کے تھانہ حلقہ سی بی گنج میں ایک بے رحم باپ نے بیٹا نہ ہونے پر اپنی ڈیرھ سالہ بیٹی کو چھت سے نیچے پھینک دیا۔ معصوم بچی کو تشویشناک حالت میں ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے، پولیس نے ملزم والد کو گرفتار کرلیا ہے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق سی بی گنج تھانہ کے گاوں کے رہائشی ہرپال کے بیٹے اروند کی شادی تقریبا تین سال پہلے ہوئی تھی۔ اروند کی اہلیہ نے ڈیڑھ سال پہلے کاویہ نام کی بچی کو جنم دیا تھا ، جب اروند کی بیوی دوسری مرتبہ حاملہ ہوئی تو اس کو امید تھی کہ اس مرتبہ اس کے گھر بیٹا پیدا ہوگا ، لیکن اروند کی اہلیہ نے چار دن پہلے ایک اور بیٹی کو جنم دیا،جس پر میاں بیوی کے درمیان جھگڑا ہو گیا اروندغصہ میں آکر اپنی بڑی بیٹی کاویہ کو چھت پر لے گیا اور نیچے پھینک دیا، اہل خانہ نے جب کاویہ کو خون سے لت پت زمین پر پڑا دیکھا ، تو فورا کاویہ کو تشویشناک حالت میں ہسپتال لے گئے، واقعہ کی اطلاع ملنے پر پولیس نے کاویہ کے والد کو گرفتار کرلیا،پولیس کے مطابق اروند اور اس کے والد ہرپال یہ چاہتے تھے کہ ان کے گھر بیٹے کی پیدائش ہو تاکہ ان کی نسل آگے بڑھ سکے، لیکن اروند کی اہلیہ نے پھر ایک بیٹی کو جنم دیا ، جس کی وجہ سے گھر میں جھگڑا چل رہا تھا، ہرپال نے اپنی پوتی کاویہ کی گھر کا بڑا بچہ ہونے کی وجہ سے کافی پیار و محبت سے پرورش کی لیکن جب اروند کی دوسری بیٹی پیدا ہوئی ، تو ہرپال نے اخراجات برداشت کرنے سے انکار کردیا ، جس کی وجہ سے گھر میں تنازع مزید بڑھ گیا،دوسری طرف اروند کے مطابق کاویہ اس کے ہاتھ سے چھوٹ کر نیچے گر گئی، اس نے اپنی بیٹی کو جان بوجھ کر نہیں پھینکا،معصوم کاویہ کو پرائیویٹ ہسپتال میں داخل کرایا گیا ہے ، جہاں کاویہ کے سر سے خون زیادہ بہنے کی وجہ سے اس کی حالت نازک ہے۔