ایک نئی طبی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ ادرک دماغ کو ترو تازہ رکھنے اور قوت حافظہ کے حوالے سے بہترین ٹانک ہے۔ ماہرین کا مشورہ ہے کہ ادرک کو روز مرہ کی خوراک میں شامل کیا جانا چاہیے۔تھائی لیںڈ میں کی جانے والی تحقیق میں 60 خواتین کو شامل کیا گیا۔ انہیں مسلسل کئی روز تک ادرک کا عرق کھانے میں دیا گیا۔ اس کے نتیجے میں ان کی قوت حافظہ بہتر ہوئی اور دماغ کو تازگی ملی۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ادرک کے استعمال سے دماغ کو تازہ آکسیجن ملتی ہے اور حس ادراک کی کارکردگی بہتر ہوتی ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ ادرک دماغ کو تازہ رکھتی اور بڑھاپے کی وجہ بننے والے خلیات کو روکتی ہے۔ یہ سردرد کا بھی شافی علاج ہے۔ طلباء کے لیے اسے ایک بہترین اور مفید دماغی ٹانک کا درجہ حاصل ہے۔