نعتیں پڑھنے سے قلبی سکون حاصل ہوتاہے سیدہ طوبیٰ منور
تحر یر:   سیدہ ثمبرینا علی
نعت خواں سیدہ طوبیٰ منور کہتی ہیں کہ نعتیں پڑھنے سے قلبی سکون حاصل ہوتاہے انہیں بچپن سے نعت شریف پڑھنے کا شوق ہے وہ کہتی ہیں کہ میں پہلے اسکول اور کالج میں نعتیہ مقابلوں میں حصہ لیتی تھی اور اپنے گھر پر بھی میلاد کی محفلیں سجاتی تھی سیدہ طوبیٰ منورکہتی ہیں کہ ہر عاشق رسول ؐ نبی ﷺ کی شان اقدس بیان کرنا چاہتاہے مگر ساری دنیا کے سمندر روشنائی اور ساری دنیا کے درخت قلم بھی بن جائیں تب بھی ہم اپنے آقا ﷺکی حمد و ثناء کا حق پوری طرح ادا نہیں کر سکتے طوبیٰ منورکہتی ہیں کہ ربیع الاول کا ماہ ہر مسلمان کے لئے انتہائی اہمیت کا حامل ہے چونکہ یہ مہینہ نبی ؐ کی ولادت کے جشن منانے کا مہینہ ہے سیدہ طوبیٰ منور کہتی ہیں جب آقا دو جہاں ؐ دنیا میں جب تشریف لائے تو ان کے آنے سے دنیا میں ہر سو اجالا ہو گیا اندھیرے چھٹ گئے اور ہر طرف نور ہی نور جگمگانے لگااس لئے ہم بھی پیارے نبی ؐ کی آمد کا جشن مناتے ہیں سیدہ طوبیٰ منور کہتی ہیں ہم ہر سال پہلے سے بھی زیادہ انتہائی مذہبی جوش و جذبے کے ساتھ جشن عید میلاد النبی ﷺ مناتے ہیں اورقیامت تک مناتے رہیں گے سیدہ طوبیٰ منور کہتی ہیں کہ دنیا کی تخلیق ہی سرکاردو عالم ﷺ کی وجہ سے ہوئی ان کی دنیا میں تشریف آوری پر زمین و آسماں کی ہر شے خوشیاں منانے لگیں سیدہ طوبیٰ منور نعت خوانی میں صدیق اسمٰعیل ،وحید ظفر قاسمی،منیبہ شیخ ،اویس رضا قاردی،خورشیداحمداورتابندہ لاری کو بہت پسند کرتی ہیں وہ کہتی ہیں کہ نعت گوئی میں ان نعت خوانوں نے نیا اسلوب متعارف کرایا ہے اور آج کے نعت پڑھنے والے انہیں کو فالو کرتے ہیں اور طوبیٰ منور بھی نعت پڑھنے میں انہیں نعت خوانوں کو استاد مانتی ہیں سیدہ طوبیٰ منور کہتی ہیں نعت پڑھنے والوں کے لئے نعت اسکول ،اکیڈمی اور کالجز بنانے چاہئے تا کہ نئے نعت خواں ان اداروں سے باقائدہ نعت پڑھنا سیکھیں سیدہ طوبیٰ منور کہتی ہیں کہ بحیثیت مسلمان اور سچا عاشق رسول ؐ وہی ہوتا ہے جو زیادہ سے زیادہ میلاد کی محفلیں سجاتا ہے کیونکہ عشق رسولؐ ہی مومن کی میراث ہے