ریاض: امام کعبہ  الشیخ صالح بن حمید نے کہا ہے کہ پاکستان نے ہمیشہ امت مسلمہ کی وحدت کے لیے اہم کردار ادا کیاہے،ہمیں مسالک کی تفریق کے بغیر مل کر مسائل کا حل تلاش کرنا ہے،سعودی عرب کی سربراہی میں بننے والا اتحاد کسی ایک ملک کے خلاف نہیں ہے یہ اسلامی ممالک کو متحد رکھنے کے لیے ہے۔ تفصیلات کے مطابق سعودی دارالحکومت ریاض میں مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے سربراہ سینیٹر پروفیسر ساجد میر کی قیادت میں پاکستانی علماء کے وفد نے امام کعبہ الشیخ صالح بن حمید سے ملاقات کی،جس میں امت مسلمہ کو درپیش مسائل اور دوطرفہ امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ امام کعبہ الشیخ صالح بن حمید نےمسلمانوں کو درپیش مشکلات سے نجات کے لیے باہمی اتحاد کو نہایت ضرور ی قراردیا اور کہا کہ ہمیں فرقہ پرستی کی بجائے کلمہ حق کی بات کرنی چاہیے جس کی بنیاد قرآن وسنت ہے ، تب ہی فرقہ واریت ختم ہو سکتی ہے ۔امام کعبہ الشیخ صالح نے کہا کہ امت مسلمہ کا چاہئے کہ اسلام کے جھنڈے تلے اکٹھے ہو جائیں اور قرآن و سنت کی تعلیمات پر عمل کریں،پاکستانی اور سعودی شہریوں میں گہرے تعلقات ہیں اور وہ ایک دوسرے کی بہت عزت کرتے ہیں،دونوں ملکوں کے علماء کا ایک دوسرے کے ساتھ گہرا تعلق ہے اور اس طرح کے وفود اور زیارات سے اس تعلق کو مزید تقویت ملتی ہے۔اس موقع پر  سینیٹر ساجد میر نے کہا کہ پاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات لازوال اور انمول رشتوں میں بندھے ہوئے ہیں ،سعودی عرب نے ہر مشکل وقت میں پاکستان کا ساتھ دیا اور دوستی کا حق ادا کیا ہے ،ہم حرمین شریفین کے تحفظ کے لیے ہرقسم کی قربانی دیں گے ،سعودی عرب کو درپیش سلامتی کے خطرات سے ہر مسلمان آگا ہ ہے ،پاکستان کسی صورت بھی سعوی عرب کو تنہا نہیں چھوڑ سکتا ۔