رحیم یار خان (اکرم طارق )دریائی کٹاو کی شدت میں آضافہ پکے مکان اور گنے کے تیار فصلات تباہ علاقے میں خوف وہراس ،نقل مکانی شروع ،مختلف نمائندوں کے وعدے محض اعلانات ثابت ،دریائی کٹاو سے بڑی آباد ی ،گورئمنٹ سکولز اور منچن بند کو خطرہ تفصیل کے مطابق دریائے سندھ کے کٹاو کی شدت میں آضافہ ہونے سے موضع احمد کڈن میں صورت حال مزید گھمبیر ہو گئی ہے دریائی کٹاو سے بستیوں کے پکے مکانات ،گنے کی تیار فصلات تبا ہ ہو رہی ہیں اور دریائی کٹاو تیزی سے آگے بڑھ رہا ہے علاقے سے منتخب عوامی نمائندوں وفاقی وزیر مخدوم خسروبختیار اور صوبائی وزیر مخدوم ہاشم جواں بخت کی طرف سے حفاظتی اقدامات کے وعدے محض اعلانات ثابت ہوئے ہیں علاقے کو دریائی کٹاو سے بچانے کے لیے تاحال کوئی اقدامات نہ ہونے پر علاقے میں خوف وہراس پھیل گیا ہے لوگوں نے نقل مکانی شروع کر دی ہے دریائی کٹاو سے بڑی آبادی،گورئمنٹ سکولز اور سرکاری منچن بند کو خطرہ لاحق ہو چکا ہے اگر فوری و ہنگامی اقدامات نہ کیے گئے تو 6 سے 8 ہزار آبادی اور قیمتی فصلات ،باغات دریابرد ہو جائیں گے اور منچن بند بھی تباہ ہو جائے گا