لاہور: نیب حکام آشیانہ ہاؤس کیس میں زیر حراست شہباز شریف کے میڈیکل چیک اپ کے معاملے پر تذبذب کا شکار ہیں اور 3  روز گزرنے کے باوجود ابھی تک میڈیکل بورڈ تشکیل نہ دیا جا سکا۔ ذرائع کے مطابق صدر مسلم لیگ (ن) و سابق وزیرِاعلی پنجاب شہباز شریف کے میڈیکل چیک اپ کے لیے تاحال ڈاکٹرز کا میڈیکل بورڈ تشکیل نہ دیا جا سکا تین دن گزر گئے مگر نیب حکام ڈاکٹرز نہ ڈھونڈ سکے جبکہ عدالت نے قومی اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر میاں شہباز شریف کو تمام میڈیکل سہولیات فراہم کرنے اور ان کی میڈیکل رپورٹس چیک کروانے کا حُکم دیا تھا۔ نیب حکام نے عدالت میں بیان دیا تھا کہ میاں شہباز شریف کو شیخ زید اسپتال کے ڈاکٹرز کو چیک کروائیں گے مگر ابھی تک ان کا مکمل طبی معائنہ نہیں کرایا گیا۔ سابق وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کا اسلام آباد میں مکمل میڈیکل چیک اپ اور ٹیسٹ ہوئے جس میں انکشاف ہوا کہ ان کے خون میں کینسر کے جراثیم موجود ہیں اور انہی میڈیکل رپورٹس کی روشنی میں فوری طور پر مرض کی مناسبت سے مزید ٹسٹ اور مکمل میڈیکل چیک اپ کی ضرورت ہے مگر ابھی تک نیب میڈیکل بورڈ تشکیل نہ دے سکا۔ دوسری جانب نیب حکام کے اس رویے پر میاں شہباز شریف سمیت ان کے اہلخانہ میں تشویش پائی جا رہی ہے کہ اخر وہ کون سی وجہ ہے کہ رپورٹس آنے کے باوجود ان کا میڈیکل چیک اپ بروقت نہیں کرایا جا رہا۔