اسلام آباد :  پاکستان مسلم لیگ (ن) کے ناراض  مرکزی رہنما وسابق وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے ملکی سیاست میں آزاد حیثیت میں ’’پروایکٹو رول‘‘ ادا کرنے کا فیصلہ کیا ہے، وہ مسلم لیگ (ن) میں واپس جارہے ہیں اور نہ ہی کوئی سیاسی جماعت جوائن کریں گے۔انہوں نے عام انتخابات سے قبل اور بعدازاں پی ٹی آئی میں شمولیت کی دعوت کو قبول کیا اور نہ ہی موجودہ حکومت کا حصہ بننے پر آمادہ ہوئے ہیں  تاہم وہ موجودہ صورت حال میں اپنے مسلم لیگی تشخص کو برقرار رکھیں گے۔ذرائع کے مطابق چوہدری نثار علی خان برطانیہ میں علاج سے واپسی کے بعد اپنے حلقہ انتخاب کے معززین سے ملاقاتیں کررہے ہیں اور اپنے حلقہ ہائے انتخاب کے عوام سے رابطہ کو مستحکم کرنے کی حکمت عملی پر عمل پیرا ہیں۔ذرائع کے مطابق پچھلے ڈیڑھ ماہ کے دوران متعدد مسلم لیگی رہنماؤں نے ان سے ملاقاتیں کی ہیں لیکن چوہدری نثارعلی خان مسلم لیگ ن میں واپسی کے ایشو پر کوئی بات کرنے کے لیے تیار نہیں، تاہم وہ مسلم لیگ ن کی اعلیٰ قیادت کے بارے میں کوئی بات کرنے سے گریز کررہے ہیں۔