بہاولپور: تحریک بحالی صوبہ بہاولپورکے مرکزی رہنما محمداکرم انصاری نے ایک اخباری بیان میں کہاہے کہ جنوبی پنجاب صوبہ کانام بہاولپوری عوام کے حقوق پرڈاکہ ڈالناہے پی پی پی، ن لیگ نے بھی بہاولپوری عوام سے حق تلفی کی ہے۔ پی ٹی آئی بھی اسی تاریخ کودہرارہی ہے جس صوبے نے ایگزیکٹوآرڈر کے تحت بحال ہوناہے اس پرتوجہ نہیں دی جارہی اورجونیاصوبہ بنناہے اس پرشوراورواویلا کررہے ہیں پی ٹی آئی اپنے غلاموں کوخوش کرنے کیلئے جنوبی پنجاب صوبے کاورد کررہے ہیں ملتان نے پہلے بھی بہاولپورکی عوام کے حقوق پرڈاکہ ڈالاہے اب دوبارہ بہاولپورکی عوام کے حقوق پرڈاکہ ڈالنے کی کوشش کررہے ہیں جب ملتان کی عوام سے رائے لی جائیگی توملتان کی عوام بھی ملتان کے حق میں ویوز دے گئی جبکہ تاریخ گواہ ہے امیرآف بہاولپور نے ملتان کوفتح کرکے بخشش کے طورپر چھوڑ دیا جب بہاولپور صوبہ تھاتوایگزیکٹو آرڈرکے تحت ون یونٹ میں شامل کیاگیا جب ون یونٹ ختم ہواتوایگزیکٹو آرڈر کے تحت بہاولپور کوپنجاب میں شامل کردیاگیا اوراسی ایگزیکٹو آرڈر کے تحت بہاولپور صوبہ بحال ہوناتھا۔پاکستان کے سیاستدان جان بوجھ کر بہاولپورکی عوام کیساتھ سوتیلی ماں جیساسلوک کررہے ہیں۔ جبکہ بہاولپور صوبائی بحالی کی بجائے جنوبی پنجاب پرزوردیاجارہاہے اوردارالخلافہ بھی بہاولپور کی بجائے ملتان کے مخدوم لغاری، مزاری، گیلانی سیکرٹریٹ اوردارالخلافہ میں بھی ڈاکہ ڈال رہے ہیں۔ ملتان کے سیاستدان سانپ سے بھی زیادہ زہریلے ہیں۔وہ لودھراں کے وکلاکوبہاولپور کی ہائیکورٹ میں آنے سے برداشت نہیں کرتے اسی طرح بہاولپورکی صوبائی بحالی کی سب سے بڑی رکاوٹ ہیں۔